Saturday, February 21, 2009

آوازِدوست

آوازِدوست ان چند کتابوں میں سے ایک ہے جسے میں نے کئی بار پڑھا اور ہر بار پہلے سے زیادہ لطف محسوس کیا –مختار مسعودکہتےہیں
میں مسجد کی سیڑھیوں پر بیٹھا ان تین گمشدہ صدیوں کا ماتم کررہاتھا- مسجد کے مینار نے جھک کر میرے کان میںراز کی بات کہہ دی، جب مسجدیں بے رونق اور مدرسے بے چراغ ہو جائیں،جہاد کی جگہ جمود اور حق کی جگہ حکایت کو مل جائے،ملک کے بجائے مفاد اورملت کے بجائے مصلحت عزیزہو،اورجب مسلمانوں کو موت سے خوف آئےاورزندگی سے محبت ہو جائے تو صدیاںیوں ہی گم ہو جاتی ہیں۔

7 comments:

cavaliere84 said...

One of MY favourite books too :)

Zios said...

Nice abstract from a nice book. :-)
He has tried to collect wisdom of people who came long before us....like “اہلِ اقتدار کے کان کلمہّ حق سے محروم ہو جاتے ہیں اور کچھ عرصہ بعد اتنا مانوس ہوتا ہے کہ نہ اسے سننے کی تاب رہتی ہے نہ سمجھنے کی توفیق“. In our history was true 1300 years ago and it is true now.

Ash said...

i am loving your blog's new lok girl..
*thumbs up*
cant read teh abstract appropiately..
some words are missing..:(

Anaa said...

yup,One of the best book of urdu litreature...
Thanx for the comment! cavaliere84

اہلِ اقتدارکے بارے میں ان کی ساری باتیںدل کو لگتی ہیں
Thanx for the comment !Zios

hi Ash ! i m happy that u like the new look.... i will check the abstract ,,but i think every thing is fine on my side...

Viks said...

LOL - I can read urdu, but for some reason I can't read it on internet. I feel bad that I'm missing half of your post, since they are in Urdu.

Mawra said...

بہت خوب۔ میں نے کتاب پڑھی تو نہیں لیکن اقتباس بہت اچھا پوسٹ کیا ہے۔

بلاگ کا تھیم لنک سے ڈاؤنلوڈ کر لیں۔ بلاگ سپاٹ کے کچھ تھیم اردو میں ترجمہ ہوئے ہیں۔ اگر یہ بلاگ پر اپلوڈ کر لیں گی تو اردو درست نظر آئے گی۔

http://www.urduweb.org/mehfil/showthread.php?t=17625

Anaa said...

viks it is may be because u did not enable urdu language through regional language tool of windows.
Thanks Marwa ,for the comment .
اگر کتا ب پڑھی نہیں تو ضرور پڑھیں بہت اچھی کتاب ہے اور دیکہیں تھیم میں نے ڈاؤنلوڈ کرلیا بہت شکریہ آپکا